بولی وڈ اسٹار اجے دیوگن نے اپنی نئی فلم ‘بادشاہو’ کے لیے زندگی کو دائو پر لگا دیا تھا

بولی وڈ اسٹار اجے دیوگن نے اپنی نئی فلم ‘بادشاہو’ کے لیے زندگی کو دائو پر لگا دیا تھا۔اپنے کیرئیر کے آغاز سے ہی اجے دیوگن اپنے ایکشن سیکونس خود کرنے کو ترجیح دیتے ہیں اور ان کی جلد ریلیز ہونے والی فلم بادشاہو میں ایک اسٹنٹ کے دوران وہ مرتے مرتے بچے۔اس بات کا انکشاف فلم کے ڈائریکٹر ملن لتھریا نے ایک انٹرویو کے دوران کیا۔
انہوں نے بتایا کہ فلم کے ایک سین میں اجے دیوگن کو چلتی ہوئی بکتر بند گاڑی کے نیچے جانا تھا۔اس حوالے سے تمام احتیاطی اقدامات کیے گئے تھے مگر گاڑی اور سڑک کے درمیان خلاء بمشکل اتنا تھا کہ اجے دیوگن اس میں فٹ آسکتے، جبکہ ان کے چہرے سے چند انچ اوپر ہی گاڑی کے حرکت کرتے پرزے لگے تھے۔اور سب سے بڑا چیلنج یہ تھا کہ اجے دیوگن کو چلتی گاڑی سے نیچے اپنے پاؤں سڑک پر رکھ کر کچھ دیر گھسیٹ کر باہر لانا تھا اور گاڑی کے فرنٹ پر کیمرے کی جانب دیکھتے ہوئے چڑھنا تھا۔
ڈائریکٹر کے مطابق سب سے خطرناک بات یہ تھی کہ اس اسٹنٹ کی ریہرسل نہیں ہونی تھی کیونکہ اس طرح کے مناظر کو بار بار کرنا تنائو بڑھانے کا باعث بنتا ہے۔ان کے بقول ‘ میں دیکھ سکتا تھا کہ اجے دیوگن محدود جگہ پر تنگ ہونے کا خوف محسوس کررہے ہیں کیونکہ خلاء بہت کم تھا جبکہ پہیے اور گاڑی کے بلیڈ جسم کے بہت قریب، اداکار ویسے بھی تنگ جگہوں کو پسند نہیں کرتے مگر پھر بھی انہوں نے کوئی شکایت نہیں کی، میرا دل بری طرح دھڑک رہا تھا مگر اجے نے حاضر دماغی سے بہترین شاٹ دیا’۔
تاہم فلم کا عملہ یہ دیکھ کر اس وقت خوفزدہ ہوگیا جب اجے دیوگن کو باہر لایا گیا تو معلوم ہوا کہ ان کی لیدر جیکٹ گاڑی میں پھنس گئی تھی۔اس وقت انہیں احساس ہوا کہ یہ جیکٹ اجے دیوگن کی زندگی کے جان لیوا ثابت ہوسکتی تھی تاہم خوش قسمتی سے وہ محفوظ رہے۔اس فلم کا ٹریلر بھی ریلیز کردیا گیا ہے جبکہ یہ دنیا بھر میں یکم ستمبر کو ریلیز کی جائے گی

Play online Games

اپنا تبصرہ بھیجیں